May 24, 2024

Warning: sprintf(): Too few arguments in /www/wwwroot/sickbdsmcomics.com/wp-content/themes/chromenews/lib/breadcrumb-trail/inc/breadcrumbs.php on line 253

تی کونسل کی جانب سے جنرل اسمبلی کو سفارش کی ضرورت ہوتی ہے۔

<div class="paragraphs"><p>فائل تصویر آئی اے این ایس</p></div>
فائل تصویر آئی اے این ایس

اقوام متحدہ میں مالٹا کے مستقل مشن نے اپریل کے مہینے میں اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے سربراہ کی حیثیت سے اعلان کیا کہ سلامتی کونسل پیر 8 اپریل کو ایک بند اجلاس منعقد کرے گی۔ اس اجلاس کا موضوع فلسطین کی جانب سے اقوام متحدہ کی مستقل رکنیت کی درخواست پر غور کرنا ہوگا۔

العربیہ کے مطابق مالٹا مشن نے ہفتے کو ایک بیان میں کہا کہ پیر 8 اپریل صبح 10 بجے اقوام متحدہ کے مستقل رکن کے طور پر قبول کرنے کی فلسطین کی درخواست پر مشاورت کی جائے گی۔ مالٹا کے مستقل مشن کے بیان میں کہا گیا کہ نئے ارکان کو اقوام متحدہ میں داخل کرنے کے لیے درخواست کو سلامتی کونسل کی کمیٹی میں بھیجنے کے لیے ضروری اقدامات پر بند اجلاس میں بحث کی جائے گی۔

یہ بھی پڑھیں : چنئی ریلوے اسٹیشن سے 4 کروڑ روپے کی نقدی برآمد، بی جے پی کارکن سمیت 3 گرفتار

یاد رہے فلسطینی اتھارٹی نے 2011 میں اقوام متحدہ میں مکمل رکن کے طور پر شامل ہونے کی کوشش کی تھی لیکن بعد میں اس نے عارضی طور پر اپنے مستقل مبصر کی حیثیت کو عارضی مدت کے لیے برقرار رکھنے کا فیصلہ کیا تھا۔

مستقل مبصر کا درجہ رکھنے والے ممالک بھی زیادہ تر اجلاسوں میں شرکت کر سکتے ہیں اور تقریباً تمام متعلقہ دستاویزات حاصل کر سکتے ہیں لیکن انہیں ووٹ دینے کا حق حاصل نہیں ہوتا۔ فلسطین کے علاوہ (ویٹیکن سٹی) بھی اقوام متحدہ میں مستقل مبصر کی حیثیت سے شامل ہے۔ اقوام متحدہ کی رکنیت کے لیے کسی ملک کو قبول کرنے کے عمل کے لیے پہلے سلامتی کونسل کی جانب سے جنرل اسمبلی کو سفارش کی ضرورت ہوتی ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *