April 18, 2024

Warning: sprintf(): Too few arguments in /www/wwwroot/sickbdsmcomics.com/wp-content/themes/chromenews/lib/breadcrumb-trail/inc/breadcrumbs.php on line 253
جو بايدن على الشاطي - نيويورك بوست

امریکی ایوان نمائندگان کے ارکان کی بڑی تعداد میں چھٹیاں لینے پر تنقید کے بعد ریپبلکنزنے امریکی صدر کی چھٹیاں گننا شروع کر دی ہیں۔ نیویارک پوسٹ نے رپورٹ میں بتایا ہے کہ صدر بائیڈن نے اپنی صدارت کا 40 فیصد عرصہ چھٹیوں پر گذاردیا۔

امریکی صدارتی انتخابات قریب آرہے ہیں، جب کہ یوکرین اور غزہ کی جنگیں بیرونی منظر نامے پر سب سے آگے ہیں۔ اس کے علاوہ ایسےعلاقے جوکسی بھی لمحے آگ پکڑ سکتے ہیں۔ دوسری طرف امریکا کے اندرونی معاملات بیرونی جنگوں سے کم خطرناک نہیں۔

یہ سب اپنی جگہ مصدر صدر جوبائیڈن کی چھٹیاں بھی ان کے لیے ایک مسئلہ ہیں کیونکہ صدر اپنا زیادہ تر وقت ساحل سمندر پر گذارتے ہیں۔ نیویارک پوسٹ کے مطابق انہوں نے اپنی صدارت کا 40 فیصد سے زیادہ وقت چھٹیوں پر گذار دیا۔ کبھی صدر اکیلے ہی ساحل پر پائے جاتے ہیں اور کبھی وہ اپنے خاندان کے ہمراہ وہاں آتے ہیں۔

بائیڈن کے حامیوں کا خیال ہے کہ یہ کوئی انوکھی بات نہیں ہے۔ ان کا نجی گھر ریاست ڈیلاویئر میں بحر اوقیانوس کے کنارے پر واقع ہے لیکن عجیب بات یہ ہے کہ وہ انتہائی حساس حالات جیسے کہ یوکرین پر روس کے حملے کے پہلے دن اور امریکہ پرچینی جاسوس غبارے کی پرواز کے دوران چھٹیوں پر تھے۔

یہاں وائٹ ہاؤس سے ان کی طویل غیر موجودگی اور بغیر وجہ کے صدر کی چھٹیوں پر بائیڈن کے معاونین کا کہنا تھا کہ وائٹ ہاؤس میں ان کی غیر موجودگی کا مطلب اپنے فرائض سے غفلت برتنا نہیں اور اس کے باوجود 81 سالہ صدر کو سخت تنقید کا نشانہ بنایا گیا۔

جو بائیڈن ساحل سمندر پر - نیویارک پوسٹ

جو بائیڈن ساحل سمندر پر – نیویارک پوسٹ

جس چیزنے تنقید کو جنم دیا وہ یہ تھی کہ بائیڈن نے خود یوکرین کے لیے نئی امداد منظور کرنے سے قبل دو ہفتے کی چھٹی لینے والے ایوان نمائندگان کے ارکان پر تنقید کی، انہوں نے اس رویے کو عجیب اور شرمناک قرار دیا تھا۔

اس بیان کے بعد ریپبلکنز نے بائیڈن کی چھٹیوں کو گننا اور تنقید کرنا شروع کر دی۔

لیکن اگرہم بائیڈن کا موازنہ سابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ سے کریں تو پتا چلتا ہے کہ بائیڈن زیادہ چھٹیاں گذارتے ہیں۔ ٹرمپ اپنے دور صدارت کے 26 فی صد عرصے کو چھٹیوں کے طور پر گذار گئے تھے جب کی بائیڈن اب تک چالیس فی صد صدارتی مدت میں چھٹیاں کاٹ چکے ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *