April 13, 2024

Warning: sprintf(): Too few arguments in /www/wwwroot/sickbdsmcomics.com/wp-content/themes/chromenews/lib/breadcrumb-trail/inc/breadcrumbs.php on line 253
Ambassador Munir Akram, Islamabad’s permanent representative to the United Nations speaks at the UNSC’s United Nations Assistance Mission in Afghanistan (UNAMA) briefing on December 21, 2023, in New York, USA. (Photo courtesy: Pakistan Mission to the United Nations)

پاکستان نے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل سے مطالبہ کیا ہے کہ کالعدم تحریک طالبان پاکستان [ٹی ٹی پی] کو پاکستان میں حملوں سے روکنے کے لیے افغانستان پر دباؤ ڈالا جائے، افغان عبوری حکومت سے مطالبہ کیا جائے کہ وہ کالعدم ٹی ٹی پی سے تعلق ختم کرے۔

پاکستان کے مستقل مندوب منیر اکرم نے کہا افغانستان میں کالعدم ٹی ٹی پی کے مالیاتی ذرائع کی نشاندہی کی جائے، تحقیقات کی جائے کہ کالعدم ٹی ٹی پی نے جدید فوجی سامان کیسے حاصل کیا؟

سلامتی کونسل کے اجلاس میں اقوام متحدہ نے بھی افغانستان میں دہشت گرد گروہوں کی موجودگی پر اظہار تشویش کیا۔

افغانستان کے لیے نمائندہ خصوصی روزا اوتن بائیفا نے کہا کالعدم ٹی ٹی پی کے بارے میں پاکستان کو بھی تشویش ہے۔ طالبان جب تک وعدے پورے نہیں کرتے انہیں تسلیم کرنا مشکل ہو گا۔ طالبان خواتین پر ناروا پابندیاں ختم اور انسانی حقوق کی پاسداری کریں۔

سلامتی کونسل کا یہ اجلاس افغانستان کے لیے اقوام متحدہ کے مشن کی توسیع کے فیصلے کے لیے منقعد ہوا۔

اقوام متحدہ کے نمائندے نے اپنی رپورٹ میں کہا کہ افغانستان کی عبوری حکومت کے اندر اختلافات موجود ہیں جبکہ افغانستان میں بدامنی کے واقعات میں نومبر سے جنوری کے دوران 36 فیصد اضافہ ہوا ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *